Successful Marriages?

A family is a complex unit of a nation.  Woven through complicated ties, the threads of relations are very delicate.  Once broken, they need to be stitched (in Pakistan they are usually knotted the ugly way)  immediately or fixed somehow.  Otherwise, the gap turns into tremors and shake the nation as the effects of an earthquake.

قیامت کی نشانیاں ہیں بھئی۔۔۔ ٹھیک ہے۔۔۔ تو کیا ساری پاکستانیوں نے ہی پوری کرنی ہیں۔۔۔ کوئی اور قوم بھی تو حصہ لے۔۔۔ ساری حیرانیاں تے پریشانیاں ہمارا سرمایہ حیات کیوں بھئی۔۔۔

ایک خاتون پچھلے چند سالوں سے کسی کو پسند کرنے لگی ہیں اور اپنے میاں سے طلاق لینے کے آخری مراحل میں پہنچ چکی ہیں۔۔۔ میاں طلاق دینا نہیں چاہتے لیکن ان کو یہ بھی پتہ ہے کہ بیوی اب مانے گی نہیں۔۔۔ لہذا انھوں نے دوسری شادی کے لئے کوششیں شروع کردی ہیں۔۔۔ ابھی سے۔۔۔ یہ صاحب بہت ہی واجبی سے پڑھے ہیں لکھے کا پتہ نہیں۔۔۔ ان دونوں کے درمیان رہ گئے وہ پانچ بچے جو دونوں نے مل کرپچھلے پچیس سالوں میں پیدا کئے۔۔۔ بڑی بیٹی کی شادی ہو چکی ہے۔۔۔ دوسری کی منگنی۔۔۔ باقی ایک بیٹی اور دو بیٹے لائن میں ہیں۔۔۔ یہ سنی مگر سید گھرانے سے ہیں۔۔۔

ایک اورصاحب ہیں۔۔۔ انکی بیوی کسی بیماری میں مبتلا تھی۔۔۔ شادی سے چند دن پہلے یہ بات کھلی لیکن ان صاحب نے ہمدردی میں رشتہ نہیں توڑا۔۔۔ ڈاکٹرز نے بھی کہا کہ شاید شادی کے بعد ٹھیک ہوجائے۔۔۔ پچھلے دس سالوں میںبہتری نہ آسکی۔۔۔ اب یہ صاحب دوسری شادی کرنا چاہتے ہیں۔۔۔ انکے خیال میں تیسری چوتھی شادی میں کوئی برائی نہیں۔۔۔ کافی تعلیم یافتہ اور لبرل ہیں۔۔۔ خوش اخلاق اور گڈ لکنگ ہیں۔۔۔ اورکیونکہ سچا مسلمان ایک سے زیادہ شادیاں کرتاہے اور شادیوں کامقصد سیکچوئل انٹرکورس ہوتاہے۔۔۔ اور کیونکہ انکے باپ دادا نے بھی ایک سے زیادہ شادیاں کی تھیں لہذا وہ بھی کریں گے اور اس سلسلے میں سولہ سے لے کر کتنی بھی عمر کی خواتین کی تلاش میں ہیں۔۔۔ انکی اپنی عمر بتیس سال ہے۔۔۔ ان کے ساتھہ ہیں وہ تین بچے جو انھوں نے  پچھلے دس سال میں پیدا کئے۔۔۔ یہ شیعہ سنی مکس ہیں۔۔۔

ہمارے نیچے اپارٹمنٹ میں نہایت ہی خوبصورت جوڑا رہتا ہے۔۔۔ دونوں تعلیم یافتہ, دونوں شیعہ گھرانے سے۔۔۔ نیچے دونوں اپارٹمنٹ خریدے ہوئے ہیں۔۔۔ الله نے تین خوبصورت بیٹوں سے بھی نوازا ہے۔۔۔ پچھلے ڈیڑھ سال سے کینیڈاسے واپس آکر رکے ہیں۔۔۔ شاید ہی کوئی دن گذراہو کہ پوری بلڈنگ انکے لڑنے بھڑنے, رونے دھونے, چیخنے چلانے کی آوازیں نہ سنے۔۔۔ کپڑے, جوتے, گھر, گاڑی, مجلس, خاندان, شاپنگ, بچے۔۔۔ کونسا ایسا موضوع ہے جس پر دونوں میں لڑائیاں نہ ہوتی ہوں۔۔۔ حتی کہ طلاق پر آکر بات رک جاتی ہے۔۔۔ البتہ بیوی صاحبہ بچوں کو دن میں ستر مرتبہ الو کاپٹھا کہہ کر شوہر سے بدلہ لے لیتی ہیں۔۔۔

پیچھے بلڈنگ میں ایک فیملی پچھلے پندرہ سال سے مقیم ہے۔۔۔ دونوں سنی اور آپس میں کزن۔۔۔ بیوی شادی سے پہلے سے بنک میں ملازمت کرتی ہیں۔۔۔ پچھلے پچیس سے زیادہ سال کی ازدواجی زندگی میں  انتہا درجے کی پرطیش جنگوں کے علاوہ دو لڑکے پیدا کئے۔۔۔ بیٹے دونوں جیسے تیسے پڑھ لکھہ گئے۔۔۔ کچھہ کرنے کے قابل نہیں۔۔۔ بیوی صاحبہ بڑے بیٹے کے لئے پچھلے چار سال سے لڑکی دیکھہ رہی ہیں جو باہر کا ویزہ دلوادے۔۔۔ لڑکے کے بارے میں انکا کہنا ہے کہ نہایت شریف, کم گو, شرمیلا, سنجیدہ اورپرامن ہے۔۔۔ جبکہ میرا کہنا یہ ہے کہ ان میں سے کوئی خوبی اسکے ہونے والی بیوی کے کام کی نہیں۔۔۔
ایک اور خاندان ہے۔۔۔ بیوی حافظہ ہیں۔۔۔ کافی سلجھی خاتون ہیں اولاد کی تربیت پرتوجہ دینے والی۔۔۔ جتنی اچھی ماں ہیں اس سے دوگنی اچھی ساس ثابت ہوئیں۔۔۔ بیٹوں بیٹیوں میں سے کچھہ حافظ قرآن ہیں۔۔۔ اپنے بڑے حافظ بیٹے کے لئے وہ حافظہ بہو لائیں۔۔۔ اپنی دیرینہ دوست کی بیٹی جسکو انھوں نے خود حفظ کرایا۔۔۔ اسے حفظ اور میٹرک کراکے بہو بنا لائیں۔۔۔ نہ صرف یہ بلکہ اسکے نخرے بھی اٹھائے۔۔۔ نندیں بھی نیک اور شادی شدہ۔۔۔ شاندار گھر, گاڑی, سب عیش حاصل۔۔۔ لیکن اس بہو نے ان نعمتوں کی قدر نہیں کی۔۔۔ آئے دن اپنی ماں کے گھرپر۔۔۔ اپنے شوہر تک کا کام نہیں کرتی۔۔۔ بد تمیز اتنی کہ صاف جواب۔۔۔ نہیں آتا مجھے کھانا پکانا یاکوئی بھی کام۔۔۔ ایک بیٹی چھوٹی سی چاہے وہ روئے چاہے وہ بھوکی ہو۔۔۔ ایک سال کی بچی یاتوسوتی رہے یا پٹتی رہے یاکوئی اور پالے۔۔۔ اس انیس سالہ حافظہ نے کسی کی جنت کو جہنم بنایا ہواہے۔۔۔

فون آیا میرے پاس کسی جاننے والےکا۔۔۔  ایک ساٹھہ پینسٹھہ سالہ خاتون کو آنکھہ کی سرجری کے لئے پچیس ہزارروپے کی ضرورت ہے۔۔۔ میں نے تفصیلات معلوم کیں تو معلوم ہوا کہ سب اولادوں کی شادیاں کردی ہیں۔۔۔ جس بیٹے کے ساتھہ رہتی ہیں اسکی تنخواہ سات ہزار ہے, وہ بچپن سے شریف, مسکین اور دماغی طور پر کم ہے۔۔۔ اسکے تین بچے ہیں۔۔۔ میں نے کہا ان پر زکوات جائز نہیں۔۔۔ وہ بیٹوں سے اپنا حق مانگنے کے بجائے غیروں کے آگے ہاتھہ پھیلانا گوارا کرسکتی ہیں۔۔۔ کم دماغ کی شادی کیوں کردی اوراتنابھی شریف نہیں۔۔۔ تین بچے تو پیدا کرلئے نہ۔۔۔ پھر ڈاکٹر صاحب کی گارنٹی کے باوجود وہ مصر ہیں کہ چائنا میڈ نہیں,  اصل جاپانی لینس لگوائیں گی۔۔۔ حالانکہ چائنا کی نظر سے دیکھیں گی تو انکے حالات جلدی بدلیں گے۔۔۔۔ اب اگر وہ خاتون اس جرم کا اقرارکریں کہ انھوں لاکھوں عام پاکستانی خواتین کی طرح بچوں کے لئے تکلیفیں اٹھائیں مگر انکی تربیت نہیں کی۔۔۔ انھیں اسی خود غرض سوچ کے ساتھہ پالا جس میں معاشرے کی بھلائی نہیں بلکہ لاتعلقی یا انتقام ہوتا ہے۔۔۔ کہ بس کسی طرح سب میرے بچوں کو مل جائے۔۔۔ اور وہ اب مثبت سوچ پھیلائیں گی عورتوں میں۔۔۔ تب تو میں انکی مدد کروں گی ورنہ خدا حافظ۔۔۔۔ اسکے بعد دوبارہ فون نہیں آیا۔۔۔

اس جیسی ہزاروں کہانیاں ہیں۔۔۔ اسی قسم کی لاکھوں عورتیں اور لاکھوں مرد۔۔۔ ان کی زندگیوں میں نفرتیں, گالیاں, طعنے, غصہ, لاتعلقی, اپنی خواہشات پوری نہ ہونے کی شکایتیں تو ہیں مگر اس میں کہیں ان بچوں کے بارے میں کوئی سوچ, کوئی منصوبہ بندی نہیں ہوتی جو حادثاتی طور پرپیداہوجاتے ہیں۔۔۔ حالانکہ ان بچوں کے سر پر ماں باپ کا سایہ ہوتاہے۔۔۔ لیکن یہ سایہ ان بادلوں کی طرح ہوتاہے جو گرجتے ہوئے گذر جاتے ہیں۔۔۔ ان سے رحمت نہیں برستی۔۔۔
جہاں ماں باپ اتنے خود غرض اور ظالم ہوں کہ ہوں کہ اپنے بچوں کو انسان نہ بنا سکیں وہ بھلا انسانیت اور امت کے لاوارث بچوں کا دکھہ کیا پہچانیں گے۔۔۔
جہاں مرد پڑھ لکھہ کربھی اتنے جاہل ہوں کہ بیوی کو بھی ایک قانونی طوائف کی طرح  سمجھیں اور جہاں پڑھی لکھی خواتین کی ساری دلچسپیاں خود کو ایک پرکشش عورت بنا کر پیش کرنے کی حد تک ہوں۔۔۔ وہاں زنا بالجبر کاکون نوٹس لے گا۔۔۔
جہاں غیر شادی شدہ لڑکے اور لڑکیوں کے خواب یہ ہوں کہ شادی کے بعد میں, میرا شوہر یا میری بیوی اور میرے بچے۔۔۔ اوربس۔۔۔ ایسی خود غرض خوابوں کی تعبیرمعاشرہ کی بھلائی, حب الوطنی, انسانیت کی صورت میں نہیں نکلتی۔۔۔ بلکہ نفرت, بغض, دشمنی, حسد, انتقام, بربادی ہوتی ہے۔۔۔
اور اس پر خوش فہمی کا یہ عالم کہ۔۔۔ مغرب کو اور غیر مسلموں کو خاندانی نظام, صبر وبرداشت, وفاداری ہم سے سیکھنی چاہئے۔۔۔ کم ازکم ہمارے ہاں وہ بےغیرتی اور بے حیائی نہیں ہے۔۔۔  جیسے بھی صحیح شادیاں کامیاب ہو جاتی ہیں کم ازکم طلاقیں تو نہیں ہوتیں نہ۔۔۔
کامیاب شادیاں, کامیاب زندگیاں۔۔۔ کبھی سوچا ہے انکا مطلب کیا ہوتا ہے۔۔۔۔

About Rubik
I'm Be-Positive. Life is like tea; hot, cold or spicy. I enjoy every sip of it. I love listening to the rhythm of my heart, that's the best

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: