Birds are not political – پرندے غیر سیاسی ہوتے ہیں

.

Birds are the beauty in the air.  They don’t look good in cages.  They are meant to fly freely.  Trees are their habitat.  Those who destroy their environment are not humans.  Even animals don’t damage trees because they know that trees provide them with food and shade.

There are no trees in clusters left in Karachi.  Only the one planted by Mustafa Kamal, produce no flowers, no fruits and provide no shade.  People don’t care about these changes.  That is because we don’t teach environment in schools and colleges, not the way it is supposed to be.  We don’t discuss environment at homes.

The only birds that are seen around in Karachi are pigeons and crows.  Pigeons live on the windows and balconies of buildings.  This is where they even mate.  Poor pigeons have no privacy.  Crows are found swinging on electric wires or Noor Mustafa Masjid in Surjani Town.

Sparrows and parrots seem endangered.  Parrots are attracted to guava, mango and fruit trees but they are no where to be found.

.
آتا ہے یاد مجھ کو گزرا ہوا زمانہ
وہ باغ کی بہاریں، چڑیوں کا چہچہانا 
.
پورے کراچی میں کہیں درختوں کا جھنڈ نہیں چھوڑا کہ پرندے اپنے گھونسلے بنا کر چین کی زندگی بسر کر سکیں اور اس کا آدھے سے زیادہ گناہ ایم کیو ایم پر جاۓ گا… درخت بھی لگاۓ تو ایسے کہ جن پر پرندے تو کیا، مکڑیاں بھی جالا نہیں بناتیں… بے پھول، بے پھل درخت… لے دے کے کراچی میں صرف کبوتر ہی رہ گۓ ہیں یا پھر کوّے … چڑیاں کسی زمانے میں نظر آیا کرتی تھیں… طوطوں کی آواز سنے زمانہ ہو گیا… اور کوئی وائلڈ لائف چھوڑی نہیں… اور آج کل تو جس مال یا شادی حال میں گھسو، پتہ چلتا ہے کہ بابر غوری کا ہے…ایم کیو ایم الله سمجھے، کم بختوں نے ہر جگہ عمارتیں کھڑی کر دیں ہیں یا پھر فوڈ سٹریٹس… بچوں کو آؤٹنگ کرانی ہو تو نسرین جلیل نشاط سنیما لے گئیں تھیں بھارتی مووی دکھانے… کم نظر، کم عقل لوگ…
.
خیر، بات ہو رہی تھی پرندوں کی… پرندے تو آسمان کی خوبصورتی ہوتے ہیں… پرندوں کی آوازوں کے بغیر کتنی ویرانی ہوتی ہے… سنّاٹا… اور پرندے پنجروں میں بند کرنے کے لئے نہیں ہوتے… انھیں الله سبحانہ و تعالی نے اڑنے کے لئے پیدا کیا ہے… 
.
تو لے دے کے کراچی میں صرف کبوتر ہی رہ گۓ ہیں یا پھر کووے… کبوتر بے چارے فلیٹس کی کھڑکیوں پر یا عمارتوں کی چھتوں پر بیٹھ کر مستیاں کرتے ہیں… انکو کہیں پرائیوسی ہی نہیں… کوّے بے چارے بجلی کے تاروں پر جھولتے ہیں یا پھر سرجانی ٹاؤن کی نور مصطفے مسجد پر بیٹھے رہتے ہیں… 
.
اب دیکھیں اگر کہیں امرودوں، آم، بادام اور دوسرے درخت لگا دیے جائیں تو کتنے طوطے آئیں گۓ… اور اگر انکو چھیڑا نہ جاۓ، پکڑا نہ جاۓ تو وہ سمجھ جائیں گۓ کہ یہاں الله کے مومن بندے رہتے ہیں… اور ڈریں گے نہیں… پھر وہ درختوں پر بیٹھے بیٹھے ہی ہماری باتیں سن سن کر ہماری بولی سیکھ لیں گے… اور پھر باتیں کیا کریں گے… انکی دیکھا دیکھی اور قسم کے پرندے بھی آجائیں گے… سوچیں کیا منظر ہوگا… 
اور اگر یہاں کے مرد عورت انسان کے بچے بن جائیں اور جانوروں کو الله کی مخلوق سمجھیں تو موروں اور وہ سفید والے سارس جیسے پرندوں کو نیچے چھوڑا جا سکتا ہے، نام نہیں پتہ انکا، لیکن الہدی میں دیکھے تھے دو… 
.
اب کلفٹن اور سی ویو پر کتنی جگہ ہے پارکوں میں… بے کار پڑے ہیں… لوگ جا کر گندگی ہی پھیلاتے ہیں… وہاں بھی بلڈنگز کھڑی کر دیں بڑی بڑی… بس پتھروں کی عمارتوں میں گھومتے رہو… باہر آؤ تو گندگی، ویرانی… 
.
کہیں پھولوں کی کیاریاں نہیں… اب اگر پھول ہونگے تو تتلیاں آئیں گی نا… تتلیاں ہونگی تو شہد کی مکھیاں بھی آئیں گی… شہد کی مکھیاں ہونگی تو شہد ملے گا… لیکن درخت کہاں سے آئیں گے… یہ ایم کیو ایم والے درختوں پر تو شہد کی مکھیاں چھتے نہیں بنائیں گی…
.
.
ایک مسلہ یہ بھی ہے کہ اگر پھلوں کے درخت لگا دیے جائیں یہ سوچ کر کہ لوگوں کے کھانے کا مسلہ حل ہو جاۓ تو پھر سیاسی جماعتوں کا کیا کیا جاۓ گا… کیوں کہ یہ تو بھوکے بھیڑیے ہوتے ہیں، بلکہ ان سے بھی بد تر، انکا تو پیٹ بھرا بھی ہو تب بھی دوسروں کے منہ سے نوالہ چھین لیں… انکے کارکن درختوں کے پھل اور پرندے، دونوں پر قبضہ کر کے انکا کاروبار شروع کر دیں گے… عوام کو تو پھر بھی کچھ نہیں ملے گا… بلکہ یہ ہو گا کہ دوسری جماعتیں ان درختوں کو تباہ کر دیں گی تاکہ جن کے قبضے میں ہیں یہ درخت وہ فائدہ نہ اٹھا سکیں… انکی آپس کی ضد بحث نے پاکستان تباہ کر دیا… 
اس کا مطلب ہے کہ سیاسی جماعتوں کو ختم کے بغیر کوئی کام نہیں ہو سکتا… 
چلو کوئی بات نہیں، الله بہتری کرنے والا ہے… 
.

About Rubik
I'm Be-Positive. Life is like tea; hot, cold or spicy. I enjoy every sip of it. I love listening to the rhythm of my heart, that's the best

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: