Names as Symbol of Crimes – نام بھی علامت جرم ہوتے ہیں

Hitler’s name for Jews is a symbol of hatred and brutality.  India’s name for Kashmiris is a symbol of officially illegal oppression, barbarism.  Jewish or Jews’ name for Palestinians is the symbol of crime against humanity and illegal occupation of land, wherever they find an inch of territory they would want to own it even by bloodshed.  America’s name in Muslim world is a symbol of war declared against Muslims.

In Islamic history, Yazeed, Meer Jafar and Meer Sadiq are the names of shame, embarrassment, treason, lust for power and authority, greed for wealth and insincerity.  No decent Muslim want their children to be called with these names.

The history of Pakistan is soon going to produce hundreds of such names that have earned shame for the whole nation.  Names that even their own generations will be embarrassed to show any association with them.  The nation already curses those who caused the division of East Pakistan and West Pakistan.

.

 نام سارے ہی اچھے ہوتے ہونگے… لیکن کچھ نام انسانوں کی بد کرداری کی وجہ سے برائی، نفرت اور جرم کی علامت بن جاتے ہیں… 
.
جس طرح ہٹلر کا نام یہودیوں کے لئے نفرت کا باعث ہے اسی طرح  یزید، میر جعفر، میر صادق … یہ تین اسلامی تاریخ کے وہ نام ہیں جنھیں کوئی غیرت مند مسلمان اپنے بچوں کی شناخت نہیں بنانا چاہتا… انکا قصور کیا تھا… یہ اپنی قوم کے غدّار تھے… دوسری قوموں کے ہمدرد… اپنی خواہشات کے غلام… اختیارات کے حریص… خزانوں کے لالچی… اپنی اولادوں کو حرام، لوٹ اور غدّاری کی دولت پر عیش کروانے والے باپ… کیا کوئی جانتا ہے کہاں ہیں انکی اولادیں یا خاندان؟  کیا کوئی انکے لئے دعاۓ مغفرت کرنے والا ہے؟  کیا کوئی انکے خاندان اور رشتہ داروں میں سے کھڑا ہو کر یہ کہ سکتا ہے کہ ہم انکے خاندان سے ہیں؟  کیا انکی غداری اور دولت انہیں ذلت و رسوائی سے بچا سکی؟… 
.
مستقبل قریب میں کچھ اور ایسے نام اب پاکستان کی تاریخ کا حصّہ بنیں گے جن سے نسبت جوڑتے ہوۓ لوگ شرمندہ ہوا کریں گے… آصف زرداری، بلاول زرداری، نواز شریف، الطاف یزید ایم کیو ایم کا بانی، رحمان ملک، شاہی سید، فضل الرحمان اور انکے چلے چانٹے، پاکستانی سیاست کے کانٹے…
جنکے لئے آج لوگوں کے دلوں میں نفرتیں اور زبانوں پر بد دعائیں ہوں، وہ بھلا کتنے دن اور عیش کر سکتے ہیں… یہ وہ لوگ ہیں جنہوں نے اپنے ماں باپ کے نام کو بھی دھبہ لگایا اور اولادوں کو بھی سرکاری سرپرستی میں بے خوفی اور بے غیرتی کے ساتھ جرائم کا راستہ دکھایا… اور انکی عورتیں بھی انکے حرام کی کمائی پر عیش کرنے میں ساتھ اور جرائم کی شریک کار…
.
انکے لئے عزت نام ہے اپنے جرائم کو جسٹفاۓ کرنے کا… ہزاروں لوگ انکے جرم کی کامیابی کی کہانیاں سنیں اور یہ اپنے حریفوں کو نیچا دکھاتے رہیں کہ دیکھو ہم نے پاکستان کو زیادہ نقصان پنہچایا… 
.
ان سے کچھ بھی مانگنا ذلت و رسوائی اور عزت نفس کا سودا کرنے کے برابر ہے…
.
.

This slideshow requires JavaScript.

About Rubik
I'm Be-Positive. Life is like tea; hot, cold or spicy. I enjoy every sip of it. I love listening to the rhythm of my heart, that's the best

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: