Compounds or Phrases – مركب غیرمفید یا ناقص

.

مرکب
.
دو یا دو سے زیادہ الفاظ کے مجموعے کو مرکب کہتے ہیں… مرکب ناقص میں جملہ مکمّل نہیں ہوتا اور بات ادھوری ہوتی ہے… مرکب ناقص جملہ کا مبتدا بھی ہو سکتا ہے اور خبر بھی… 
مرکب کی  سات اقسام ہیں….
مرکب اشاری , مرکب عطفی ,  مرکب جاری, مرکب مزجی یا منع صرف, مرکب بنائی, مرکب توصیفی اور مرکب اضافی…
.

1- مرکب اشاری
.
جس اسم سے کسی اسم کی طرف اشارہ کریں اسے اشارہ اور جس کی طرف اشارہ کیا جاۓ اسے مشار الیہ کہتے ہیں… اشارہ اور مشار الیہ جنس، عدد اور حالت کے لحاظ سے مطابقت رکھتے ہیں… مشار الیہ، مرکب اشاری میں ہمیشہ معرف با اللام ہوتا ہے… مرکب اشاری جملے میں مبتداء کے طور پر آتا ہے…
.
ھٰذا الْوَلَدُ – یہ لڑکا                          ھٰذہ الْمَدْرَسَةُ – یہ مدرسہ 
ھٰذا الْکِتَابُ – یہ کتاب                       ھٰذہ الکُرَّةُ – یہ گیند
ھٰذا الْقَلَمُ – یہ قلم                            ھٰذہ النَّشَّافَةُ – یہ نقشہ 
ھٰذا الْبَابُ – یہ دروازہ                      ھٰذہ السَّیّارَةُ – یہ گاڑی    
ھٰذا الْبَیْتُ – یہ گھر                          ھٰذہ الرِّسَالَةُ – یہ خط
.
ذٰلِکَ الْاَسَدُ – وہ شیر                       تِلْکَ المُسْلِمَةُ – وہ مسلمان عورت
ذٰلِکَ الْغُرَابُ – وہ کوّا                 تِلْکَ المُؤْمِنَةُ – وہ مومنہ عورت 
ذٰلِکَ الشَّمْسُ – وہ سورج                 تِلْکَ العَیْنُ – وہ آنکھ
ذٰلِکَ النَّجْمُ – وہ تارا                        تِلْکَ النَّارُ – وہ آگ
ذٰلِکَ الطِّفْلُ – وہ بچہ                       تِلْکَ الرِّجْلُ – وہ ٹانگ 
.
ھٰؤُلآءِ الْمُسْلِمُونَ – یہ مسلمان              ھٰؤُلآءِ الْمُسْلِمَاتُ – یہ مسلمان خواتین 
 اُولٰئِكَ الْمُؤْمِنُونَ – وہ مومن                اُولٰئِكَ الْمُؤْمِنَاتُ – وہ مومن عورتیں 
.
2- مرکب عطفی 
.
حروف عطف ایک لفظ، مرکب یا جملے کو دوسرے سے ملاتے ہیں… دو کلمات جو ایک ہی معاملے سے تعلق رکھتے ہوں اور انکے درمیان حرف عطف موجود ہو، مرکب عطفی کہلاتا ہے… اگر اس مرکب میں بات مکمّل نہیں ہوتی تو یہ مرکب ناقص کہلاۓ گا… پہلا لفظ معطوف اور حرف عطف کے بعد والا معطوف الیہ کہلاتا ہے… مرکب عطفی اگر معرفہ ہو تو جملے کا مبتداء اور اگر نکرہ ہو تو جملے کی خبر بن سکتا ہے…
حرف عطفی نو ہیں…
وَ  اور           فَ  پس            اَوْ یا            ثُمَّ  پھر          اَمْ  یا 
اِمّا یا             بَلْ  بلکہ           لٰكِنْ  لیکن      حَتَٰى یہاں تک کہ
.
اَرْضٌ وَ سَمَاءٌ – زمین اور آسمان                         مَاءٌ اَوْ لَبَنٌ – کچھ پانی یا کچھ دودھ 
بَیْتٌ وَ مَدْرَسَةٌ – گھر اور مدرسہ                          فَوْقَ اَوْ تَحْتَ – اوپر یا نیچے  
جَمِیْلٌ وَ قَبِیْحٌ – خوبصورت اور بدصورت            اَسْوَدُ اَوْ اَبْیَضُ – کالا یا سفید 
فَرْسٌ وَ بَقَرَةٌ – گھوڑا اور گاۓ                           خُبْزٌ اَوْ تِمْرٌ – ایک روٹی یا ایک کھجور 
.
3- مرکب جاری    
وہ مرکب جو اسم اور حرف جر سے ملکر بنے… جس اسم سے پہلے حرف جرہو تو اسے مجرور کہتے ہیں اور اسکے آخری حرف پر زیر آتی ہے… 
.
بِ – سے, ساتھ ….  بِسْمِ اللهِ  شروع الله کے نام کے سے 
تَ – حرف قسم، صرف الله کے لئے استعمال ہوتا ہے 
كَ – کے جیسا …. كَمِثْلِهِ  اس مثال کے جیسا 
لِ – کے لئے …. لِذِ كْرِ  ذکر کے لئے 
وَ – حرف قسم …. وَاللهِ   الله کی قسم 
مِنْ – سے …. مِنَ البَيْتِ  گھر سے 
فِي – میں …. فِي المَسْجِدِ   مسجد میں 
عَنْ – کے بارے میں …. عَنِ الطِّفْلِ  بچے کے بارے میں 
عَلَى – پر …. عَلَى مُحَمَّدٍ  محمد پر 
اِلَى – کی طرف …. اِلَى المَسجِدِ الحَرَامِ  مسجد الحرام کی طرف 
حَتَّى – یہاں تک کہ …. حَتّى رأْسِهَا  جب تک اس (موَنث) کا سر 
مُنْذُ تب سے ….  مُنْذُ يَومِ الجُمُعَةِ  جمعہ کے دن سے 
مُذْ تب سے ….   مُذْ خَمْسَةِ اَيَّامٍ  پانچ دن سے 
خَلَا   رُبَّ   حَاشَا  عَدَا
.
بِحَمْدِ – تعریف کے ساتھ                     فِی النَّارِ – آگ میں                   لِلْكَافِرِيْنَ – کافروں کے لئے    
عَنِ السَّاعَةِ – قیامت کے بارے میں           اِلَی الْجَنَّةِ – جنت کی طرف            عَلَی الصِّرَاطِ – راستے پر
حَتَٰى کِتَابِهِ – جب تک اس کی کتاب        وَالْعَصْرِ – قسم ہے عصر کی       مِنَ السَّمَآءِ – آسمان سے 
.
4- مرکب مزجی یا مرکب منع صرف
.
دو اسم جو درمیان میں کسی حرف کے بغیر مل کر ایک اسم بن جاتے ہیں… اس مرکب کا پہلا حصّہ مفتوحہ رہتا ہے اور دوسرا بدلتا رہتا ہے…
.
بَـعْلَبَكَّ     ‬بَـيْتَ‮ ‬لَـحْـم    حَـضْرَمَـوْت‮      شَـدَرَ‮ ‬مَـدَرَ – ادھر ادھر       صًـبَاحَ‮ ‬مَـسَاءَ  صبح شام 
.
5- مرکب بنائی   
وہ مرکب جو دو اسم الاعداد سے ملکر بنا ہو… جیسے ایک سے گیارہ تک گنتی… اس میں صرف اِثْنَا تبدیل ہوتا رہتا ہے باقی تمام اعداد مبنی ہوتے ہیں… 
.
اَحَدَ عَشَرَ ١١     –  اِثْنَا عَشَرَ ١٢         –  ثَلَاثَةَ عَشَرَ ١٣        –  اَرْبَعَةَ عَشَرَ ١٤  –  خَمْسَةَ عَشَرَ ١٥  
سِتَّةَ عَشَرَ ١٦     –  سَبْعَةَ عَشَرَ ١٧      –  ثَمَانِیَةَ عَشَرَ  ١٨     – تِسْعَةَ عَشَرَ  ١٩
.
  
6-  مرکب توصیفی
مرکب توصیفی دو ایسے الفاظ کا مجموعہ ہوتا ہے جس میں ایک اسم اور دوسرا اس کی صفت ہوتی ہے… جیسے اردو میں کہتے ہیں اچھا بچہ، ذہین عورت، نیلا آسمان، چار آم، وغیرہ 
مرکب توصیفی میں صفت اپنے اسم کے مطابق ہوتی ہے… اگر اسم موَنث ہے تو صفت بھی موَنث ہوگی… اگر اسم جمع ہے تو صفت بھی جمع ہوگی، اگر اسم نکرہ ہے تو صفت بھی نکرہ ہوگی، اگر اسم مجرور ہے تو صفت بھی مجرور ہوگی…  لیکن اگر اسم جمع مکسرغیرعاقل  ہو تو صفت واحد موَنث آتی ہے…  مرکب توصیفی اگر معرفہ ہو تو جملے کا مبتداء اور اگر نکرہ ہو تو جملے کی خبر بن سکتا ہے… 
.
مثالیں اسم معرفہ
البَیْتُ القَدِیْمُ – پرانا گھر                                        الحَقِیْبَةُ القَدِیْمَةُ – پرانا بستہ
الدَّرْسُ السَّھْلُ – آسان سبق                                    الکَلِمَةُ السَّهْلَةُ – آسان بات 
المَلْعَبُ الوَاسِعُ – وسیع کھیل کا میدان                     الاَرْضُ الوَاسِعَةُ – وسیع زمین  
الطَّالِبُ الذَّکِّیُّ – ذہین طالب علم                              الطَّالِبَةُ الذَّکِّیَّةُ – ذہین طالبہ 
الکِتَابُ الرَّدِیُ – بیکار کتاب                                  الدَّرَّاجَةُ الرَّدِیَةُ – بیکار سائیکل
.
مثالیں اسم نکرہ 
.
وَلَدٌ حَسَنٌ  – ایک اچھا لڑکا                                         بِنْتٌ حَسَنَةٌ – ایک اچھی بیٹی 
مُسْلِمٌ صَادِقٌ وَ اَمِیْنٌ – ایک سچا اور امانتدار مسلمان      مُسْلِمَةٌ صَادِقَةٌ وَ اَمِیْنَةٌ – ایک سچی اور امانتدار مسلمان 
رَجُلٌ ضَعِیْفٌ – ایک بوڑھا آدمی                                 إِمْرَاةٌ ضَعِیْفَةٌ – ایک بوڑھی عورت 
صَدِیْقٌ بَطِرٌ – ایک خودسر دوست                               صَدِیْقَةٌ بَطِرَةٌ – ایک خودسر سہیلی
قَلَمٌ جَدِیْدٌ – ایک نیا قلم                                                 سَاعَةٌ جَدِیْدَةٌ – ایک نئی گھڑی 
.
مثالیں جمع مکسر 
.
جِبَالٌ عَلِیَّةٌ – بلند پہاڑ                        مَسَاجِدُ طَیِّبَةٌ – پاک مسجدیں 
کُتُبٌ ثَمِیْنَةٌ – مہنگی کتابیں                 بُیُوْتٌ رَخِیْصَةٌ – سستے گھر            
.

مثالیں اسم الااعداد    
رَجُلٌ وَاحِدٌ – ایک آدمی                      الدَّرْسُ الْأَوَّلُ – پہلا سبق    
الطَّالِبُ الْخَامِسُ – پانچواں طالبعلم        الطَالِبَةُ الْاُوْلَی – پہلی طالبہ 
.

گھڑی میں اوقات  
گھڑی میں بجنے والے وقت کو دو اسم الاعداد کو مرکب توصیفی کے اصولوں کے تحت ملا کر بولا جاتا ہے… اس مرکب سے پہلے حروف عاملہ میں سے کوئی حرف آۓ تو دونوں عدد معدود کے اعراب ایک جیسے تبدیل ہوتے ہیں… جیسے السَّاعَةُ الْوَاحِدَةُ  سے اِنَّ السَّاعَةَ الْوَاحِدَةَ    فِيْ السَّاعَةِ الْوَاحِدَةِ …    
.
السَّاعَةُ الْوَاحِدَةُ – 1:00                 السَّاعَةُ الثَّانِیَةُ – 2:00 
السَّاعَةُ الثَّالِثَةُ  – 3:00                  السَّاعَةُ الرَّابِعَةُ – 4:00
السَّاعَةُ الْخَامِسَةُ – 5:00               السَّاعَةُ السَّادِسَةُ – 6:00
السَّاعَةُ السَّابِعَةُ – 7:00                 السَّاعَةُ الثَّامِنَةُ – 8:00
السَّاعَةُ التَّاسِعَةُ – 9:00                 السَّاعَةُ العَاشِرَةُ – 10:00 
.

7- مرکب اضافی
.
مرکب اضافی دو لفظوں کا ایسا مجموعہ ہے جس میں ایک لفظ کی اضافت یا تعلق دوسرے لفظ کی طرف ہوتا ہے… پہلا لفظ مضاف اور دوسرا مضاف الیہ کہلاتا ہے…
.
١- مضاف 
– مضاف سے پہلے نہ ‘ ال ‘ لگائی جاتی ہے اور نہ ہی آخر میں تنوین آتی ہے
– مضاف اگر معرب ہو اور مرکب اضافی سے پہلے حرف عاملہ ہو مضاف کے اعراب میں اسکے مطابق تبدیلی آتی ہے 
– اسماۓ ظروف (زمان و مکان) اور ٣ – ١٠ تک اعداد بھی مضاف بن سکتے ہیں 
– مضاف کی صفت مضاف الیہ کے بعد آتی ہے 
– مضاف اگر تثنیہ یا جمع سالم ہو تو اس کا نون رفع گر جاتا ہے
.
٢- مضاف الیہ 
– مضاف الیہ ہمیشہ مجرور ہوتا ہے
– یہ نکرہ بھی ہو سکتا ہے اور معرفہ بھی
– مضاف الیہ اپنے بعد والے اسم کا مضاف بھی ہو سکتا ہے 
– ضمیر متصل ہمیشہ مضاف الیہ ہوتی ہے  
.
مثالیں اسم اور ضمیر متصل 
اس مرکب کو مجرور با ضافت بھی کہتے ہیں…
بَیْتُهُ – اس کا گھر           بَیْتُھُمَا – ان دونوں کا گھر           بَیْتُھُمْ – ان سب کا گھر
بَیْتُھَا – اس کا گھر          بَیْتُھُمَا – ان دونوں کا گھر           بَیْتُھُنَّ – ان سب کا گھر
بَیْتُکَ – تمہارا گھر         بَیْتُکُمَا – تم دونوں کا گھر           بَیْتُکُمْ – تم سب کا گھر
بَیْتُکِ – تمہارا گھر         بَیْتٌکُمَا – تم دونوں کا گھر           بَیْتُکُنَّ – تم سب کا گھر
بَیْتِیْ – میرا گھر            بَیْتُنَا – ہمارا گھر 
.
مثالیں دو اسماء – مضاف الیہ نکرہ 
بَابُ مَسْجِدٍ – کسی مسجد کا دروازہ            بِنْتُ ضَیْفٍ – ایک مہمان کی بیٹی 
قَلَمُ مُعَلِّمٍ – ایک استاد کا قلم                      دَرَّاجَةُ وَلَدٍ – کسی لڑکے کی سائیکل 
.
مثالیں دو اسماء – مضاف الیہ معرفہ 
کِتَابُ اللهِ – الله کی کتاب                        قِطَّةُ الْاِمْرَاَةِ – عورت کی بلّی
رَسُولُ اللِه – اللہ کا رسول                      سَیَّارَةُ الْأَمِیْرِ – حاکم کی گاڑی  
.
مثالیں ایک سے زائد مضاف اور مضاف الیہ 
ان مرکبات میں درمیان کا اسم مضاف بھی ہے اور مضاف الیہ بھی… اسی لئے مضاف کی طرح اس پر ‘ ال ‘ نہیں اور مضاف الیہ کی طرح مجرور ہے…
کُتُبُ بِنْتِ الْمُدِیْرِ – پرنسپل کی بیتی کی کتابیں        زَهْرَةُ حَدِیْقَةِ الرَّجُلَانِ – دو آدمیوں کے باغ کا پھول 
.
مثالیں مضاف الیہ – ضمیرمتصل 
ان مرکبات میں ضمیر متصل والا مرکب اضافی آخر میں ہے اور کیونکہ ضمیر متصل مبنی ہے اس لئے اس پر زیر نہیں لگی، حالانکہ یہ حالت جر میں ہے…
بَابُ بَیْتِیْ – میرے گھر کا دروازہ                    طِفْلُ صَدِیْقِ اُخْتِیْ – میری بہن کے دوست کا بیٹا 
.
.
.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

%d bloggers like this: